کراچی ٹی ٹوئنٹی میں پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو 63 رنز سے شکست دے دی۔

پیر کو کراچی میں کھیلے گئے پہلے ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں پاکستان کے 200 رنز کے بڑے ہدف کے تعاقب میں ویسٹ انڈیز کی ٹیم ایک اوور باقی رہ کر 137 رنز پر ڈھیر ہوگئی۔

رضوان نے 52 گیندوں پر 78 رن بنائے جس میں 10 چوکے شامل تھے – ان کی 12 ویں نصف سنچری اور اس سال کی 11 ویں – جبکہ حیدر نے کیریئر کی بہترین 68 رنز بنا کر میزبان ٹیم کو اپنے 20 اوورز میں 6-200 تک پہنچا دیا۔

مہمان ٹیم کبھی بھی ہدف کی تلاش میں نہیں تھی کیونکہ وہ پاکستان کے اعلیٰ باؤلنگ اٹیک کے ذریعے تباہ ہو گئے تھے اور 19 اوورز میں 137 رنز پر ڈھیر ہو گئے تھے۔

فاسٹ باؤلر محمد وسیم نے کیرئیر کا بہترین اسکور 4-40 جبکہ اسپنر شاداب خان نے 3-17 سکور کیا۔

اوپنر شائی ہوپ نے سب سے زیادہ 31 رنز بنائے لیکن لیگ اسپنر ایک ہی اوور میں شاداب کی دو وکٹوں میں سے ایک بن گئے، شمر بروکس پانچ رنز پر دوسرے کھلاڑی تھے۔

Odion Smith (24)، Rovman Powell (23) اور Romario Shepherd (21) نے بھی اچھا تعاون کیا لیکن پاکستان کو کبھی خطرہ نہیں ہوا۔

تین میچوں کی سیریز میں 1-0 کی برتری حاصل کرتے ہوئے یہ ویسٹ انڈیز کے خلاف 19 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنلز میں پاکستان کی 13ویں جیت تھی۔

پاکستان کو ایک بار پھر رضوان نے اینکر کیا، جس نے ٹوئنٹی 20 انٹرنیشنل کرکٹ میں شاندار 2021 رنز بنائے، کیلنڈر سال میں پہلے ہی 1000 رنز کا ہندسہ عبور کر چکے ہیں۔

رضوان اور حیدر نے تیسری وکٹ کے لیے 105 رنز جوڑے جب کپتان بابر اعظم بغیر کوئی رن بنائے گر گئے اور فخر زمان صرف 10 رنز بنا کر ویسٹ انڈیز کے باؤلرز کو ابتدائی بریک تھرو فراہم کر گئے۔

یہ اعظم کے لیے ایک غیر معمولی ناکامی تھی – جو T20I کرکٹ میں نمبر ایک ہیں – کیونکہ انہوں نے اسپنر عقیل حسین کی تیز ٹرننگ گیند کو سائیڈ لائن کیا۔

رضوان اور حیدر پاکستان کو بچانے سے پہلے زمان شیپرڈ میں سرفہرست ہیں۔ حیدر نے اپنی 39 گیندوں کی اننگز میں چار چھکے اور چھ چوکے لگائے۔

محمد نواز نے 10 گیندوں پر دو چھکوں اور تین چوکوں کی مدد سے ناقابل شکست 30 رنز بنا کر اننگز کا اختتام کیا۔

ویسٹ انڈیز کو ان کے T20I کھلاڑیوں میں تین کوویڈ 19 مثبت ٹیسٹوں کا سامنا کرنا پڑا، بروکس اور ڈیون تھامس کو ان کے ODI اسکواڈ سے لایا گیا، جس سے بروکس کا مختصر ترین فارمیٹ میں آغاز ہوا۔

باقی میچز بھی منگل اور جمعرات کو کراچی میں ہیں۔

پاکستان اسکواڈ: بابر اعظم (کپتان)، شاداب خان، آصف علی، فخر زمان، حیدر علی، افتخار احمد، محمد نواز، محمد رضوان، محمد وسیم جونیئر، شاہین شاہ آفریدی اور حارث رؤف

ویسٹ انڈیز: نکولس پوران (کپتان)، شائی ہوپ، برینڈن کنگ، شمرہ بروکس، روومین پاول، اوڈین اسمتھ، روماریو شیفرڈ، اکیل حسین، ڈومینک ڈریکس، اوشین تھامس، ڈیون تھامس

علیم ڈار اور احسن رضا امپائر جبکہ آصف یعقوب ٹی وی امپائر ہیں۔ محمد جاوید میچ ریفری ہیں۔

,