پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو 7 وکٹوں سے شکست دے کر ٹی ٹوئنٹی سیریز جیت لی

پاکستان نے جمعرات کو کراچی میں تیسرے اور آخری ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل (T20I) میں ویسٹ انڈیز کو سات وکٹوں سے شکست دے کر سیریز 3-0 سے جیت لی۔

محمد رضوان نے 87 اور کپتان بابر اعظم نے 79 رنز بنائے کیونکہ پاکستان نے تمام T20I میں اپنے سب سے زیادہ رنز کا تعاقب کرتے ہوئے 18.5 اوورز میں 208 رنز کا ہدف حاصل کر لیا۔

بابر اور رضوان، جنہوں نے ابتدائی وکٹ کے لیے 158 رنز کا اضافہ کیا، اس سال ٹی ٹوئنٹی میں اپنی چھٹی سنچری بنائی۔ یہ مختصر ترین فارمیٹ میں کسی بھی جوڑی کی طرف سے سب سے زیادہ ہے۔

پہلی اننگز میں ویسٹ انڈیز کے کپتان نکولس پورن نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کرتے ہوئے اپنے 20 اوورز میں 37 گیندوں پر 64 رنز کی شاندار اننگز کھیل کر سیاحوں کو 207-3 تک پہنچا دیا۔

برینڈن کنگ اور شمرہ بروکس نے بالترتیب 43 اور 49 رنز بنائے۔

ٹور اسکواڈ کے مزید پانچ ممبران – جن میں تین کھلاڑی بھی شامل ہیں – کے کوویڈ 19 کے مثبت آنے کے بعد میچ تقریباً ختم ہو گیا تھا۔

مجموعی طور پر چھ کھلاڑیوں کو ڈراپ کر دیا گیا، لیکن باقی 14 کھلاڑیوں کے ٹیسٹ منفی آنے کے بعد ویسٹ انڈیز نے کھیلنے پر رضامندی ظاہر کی۔

گڈاکیش موتی نے 26 سال کی عمر میں انٹرنیشنل ڈیبیو کیا، ڈیرن براوو بھی ٹیم میں شامل ہوئے۔

شائی ہوپ اور عقیل حسین دونوں کو وائرس کا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد قرنطینہ کر دیا گیا تھا۔

اس دوران پاکستان نے تیز گیند بازوں شاہین آفریدی اور حارث رؤف کو آرام دیا اور محمد حسنین اور شاہنواز دہانی کو شامل کیا۔

گرین شرٹس نے سیریز کا پہلا میچ 63 رنز سے جیتا تھا اور دوسرا میچ بھی کراچی میں کھیلا گیا تھا۔

پاکستان کی طرف: بابر اعظم (کپتان)، شاداب خان، آصف علی، فخر زمان، حیدر علی، افتخار احمد، محمد نواز، محمد رضوان، محمد وسیم جونیئر، شاہنواز دہانی، محمد حسنین

ویسٹ انڈیز کی طرف: نکولس پوران (سی)، برینڈن کنگ، ڈیرن براوو، شمرہ بروکس، روومین پاول، اوڈین اسمتھ، روماریو شیفرڈ، ڈومینک ڈریکس، اوشین تھامس، ہیڈن والش، گڈاکیش موتی