پاکستان مسلم لیگ ن کے ایم پی اے بلال یاسین لاہور میں مسلح افراد کے حملے میں زخمی ہو گئے۔

مسلم لیگ ن کے ایم پی اے بلال یاسین جمعہ کو لاہور میں موہنی روڈ پر سلامت محلہ میں حملے میں زخمی ہو گئے۔

لاہور پولیس آپریشنز ونگ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ موٹر سائیکل پر سوار دو نامعلوم افراد نے یاسین پر فائرنگ کی جس کے بعد اسے میو ہسپتال لے جایا گیا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ لاہور کے آپریشنز کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) عابد خان نے ہسپتال کا دورہ کیا اور شہر کے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس (ایس پی) کو اس معاملے پر فوری کارروائی کرنے کی ہدایات جاری کیں۔

بعد ازاں انہوں نے جائے وقوعہ کا دورہ کیا، جہاں سٹی ایس پی اور سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس آپریشن مستنصر فیروز پہلے سے موجود تھے۔

ڈی آئی جی نے حکام کو ہدایت کی کہ وہ علاقے کے تمام سی سی ٹی وی کیمروں سے فوٹیج حاصل کریں اور یاسین کے حملہ آوروں کی گرفتاری کے لیے تمام وسائل استعمال کریں۔

یہ بات الگ سے مسلم لیگ ن کے ایم پی اے خواجہ عمران نذیر نے بتائی don.com یاسین مسلم لیگ ن کے کارکن میاں اکرام کامی کے گھر پارٹی کارکنوں کے اجلاس میں شرکت کے لیے جا رہے تھے۔ نذیر نے بتایا کہ کامی کی رہائش گاہ کے باہر دو نامعلوم افراد نے ان پر فائرنگ کی جس سے یاسین کے پیٹ اور ایک ٹانگ پر زخم آئے۔

بعد ازاں میو ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر افتخار قریشی نے بتایا کہ یاسین زیر علاج ہے اور اس کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

پولیس کی جانب سے جاری بیان کے مطابق لاہور کیپیٹل سٹی پولیس آفیسر (سی سی پی او) فیاض احمد دیو نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی خان سے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سی سی پی او نے ملزمان کی فوری گرفتاری کے لیے ہدایات جاری کی تھیں، جن کے چہرے ڈھکے ہوئے تھے۔

دوسری جانب انسپکٹر جنرل آف پولیس (آئی جی پی) پنجاب راؤ سردار علی خان نے بھی واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو سیف سٹی کیمروں کی فوٹیج کی مدد سے حملہ آوروں کا سراغ لگانے اور انہیں جلد از جلد گرفتار کرنے کی بھی ہدایت کی۔

آئی جی پی نے کہا کہ معاملے کی ہر پہلو اور زاویے سے تحقیقات ہونی چاہیے۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے بھی واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او سے رپورٹ طلب کرلی۔ انہوں نے یاسین کے حملہ آوروں کی گرفتاری اور زخمی ایم ایل اے کو بہترین طبی امداد فراہم کرنے کی ہدایات بھی جاری کیں۔

دریں اثناء مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے واقعے کو ’دہشت گردی‘ کی کارروائی قرار دیتے ہوئے ملزمان کو گرفتار کرکے قانون کے مطابق سزا دینے کا مطالبہ کیا۔

“میں بلال یاسین کی زندگی اور صحت کے بارے میں فکر مند ہوں، اللہ ان کو سلامت رکھے [good] صحت، “شہباز نے ٹویٹ کیا، اپنی پارٹی کے کارکنوں سے یاسین کی صحت یابی کے لیے دعا کرنے کی اپیل کی۔

PML_N کی نائب صدر مریم نواز نے بھی یاسین کی صحت یابی کے لیے دعا کی اور ایک ٹویٹ میں عوام سے دعا کی اپیل کی۔

بلال یاسین لاہور کے حلقہ پی پی 150 سے منتخب ہوئے ہیں۔